ساہیوال، نوسر باز نے لالچ دے کر شہری سے 55 لاکھ ہتھیا لیے

ساہیوال(بیورورپورٹ)معصوم شہریوں کو دھوکہ دہی سے لوٹنے والا گروہ ایک بار پھر سر گرم،تلمبہ کے رہائشی ممتاز احمد جاوید نے ڈپٹی ڈائریکٹر نیب بن کر کوٹ خادم علی کے رہائشی ارشد حیات سے 55لاکھ روپے لوٹ لئے،پولیس نے مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی-تفصیلات کے مطابق تلمبہ تحصیل میاں چنوں محلہ قاضیاں ہجویری ہاؤس کے رہائشی ممتاز احمد جاوید والد اللہ بخش عابدنے مبینہ طور پر اس وقت کے ڈپٹی کمشنر ساہیوال کی وساطت سے میڈیسن ڈیلر ارشد حیات سے تعلقات استوار کئے اور بتایا کہ وہ ڈپٹی ڈائریکٹر نیب بلوچستان تعینات ہے-متعدد ملاقاتوں کے بعد ملزم نے درخواست گزار کو میڈیسن کمپنی کی ڈسٹری بیوشن دلوانے کا لالچ دے کر 55لاکھ روپے وصول کر لیے-بعد ازاں فراڈ ظاہر ہونے پر رقم واپس کرنے کا وعدہ کیا اور پنجایت میں 55لاکھ روپے کا چیک بھی دیا جو بنک سے کیش نہ ہو سکا- ارشد حیات ولد عبدالستار کی غلام شبیر ڈھکو ایڈووکیٹ میاں چنوں کی وساطت سے درخواست پر تھانہ تلمبہ نے ملزم کے خلاف دفعہ 489Fکے تحت مقدمہ نمبر 80/19درج کر کے تفتیش شروع کر دی ہے -واضح رہے کہ مذکورہ ملزم پہلے بھی تلمبہ میاں چنوں چیچہ وطنی اور ساہیوال میں متعدد افراد سے مالی فراڈ کر چکا ہے جبکہ اس کی گاڑی پر معصوم عوام کو دھوکہ دینے کے لئے سول سیکرٹریٹ پنجاب بھی لکھوایا ہوا ہے-شہریو ں نے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ اس نوسربازکے خلاف قانونی کاروائی کی جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں