علماء معاشرتی رواداری کے فروغ میں اپنا کردار ادا کریں:‌کمشنر

ساہیوال(بیورورپورٹ)کمشنر ساہیوا ل ڈویژن ڈاکٹر فرح مسعود نے کہا ہے کہ علماء کرام معاشرے میں مثبت احساسات کو فروغ دے کر انتشار پھیلانے والے عناصر کو نا کام بنانے میں اپنا کلیدی کردار ادا کریں تا کہ ملک میں رواداری اور امن کو فروغ مل سکے۔علماء کرام کو چاہیے کہ وہ اخوت اور رواداری کا پیغام دیں اور معاشرتی اختلافات ختم کرنے کیلئے عوام کو تربیت دیں تا کہ مثالی معاشرے کا قیام ممکن ہو سکے۔انہو ں نے یہ بات سرکٹ ہاؤں میں اتحاد بین المسلمین کے وفد اور ڈویژنل امن کمیٹی کے ارکان سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس کی سربراہی خطیب بادشاہی مسجد لاہور مولانا سید عبدالخبیر آزاد کر رہے تھے۔وفد میں مولانا عبدالوہاب روپڑی‘سید نو بہار شاہ‘سردار محمد خان لغاری اور مولانا مسعود قاسم بھی شامل تھے جبکہ ڈویژنل امن کمیٹی کی نمائندگی سید ضیاء اللہ شاہ بخاری‘مولانا ظفر اللہ قمر‘ قاری بشیر احمد‘حاجی احسان الحق فریدی اور شیخ اعجاز احمد رضا نے کی۔اجلا س میں آر پی او ساہیوال شارق کمال‘ڈی سی ساہیوال محمد زمان وٹو‘ڈی سی اوکاڑہ رضوان نذیر کے علاوہ انتظامیہ اور پولیس کے ضلعی افسران نے بھی شرکت کی۔انہوں نے علماء کرام کے ساتھ زیادہ سے زیادہ رابطہ رکھنے کی ضرورت پر زور دیا اور معاشرے میں امن و امان کے قیام اور مذہبی ہم آہنگی کے فروغ میں علماء کے کردار کو خراج تحسین پیش کیا۔آر پی او شارق کمال نے بتایا کہ ڈویژن میں 463ذوالجناح جلوسوں اور 1756مجالس کیلئے سکیورٹی انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں جس میں امن کمیٹیو ں کے ارکان اور تمام مکتب فکر کے علماء نے اہم کردار ادا کیا ہے۔انہوں نے علماء کو ایک گلدستہ سے تشبیح دی جس کی مہک سے پورا معاشرہ معطر ہے۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وفد کے قائد مولانا سید عبد الخبیر آزاد نے کہا کہ عاشورہ ایثار‘قربانی اور محبت کا پیغام دیتا ہے اور ہمیشہ قرآن کی تعلیمات پر عمل کر کے تفرقات سے بچنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ علماء کرام نے ہمیشہ امن کیلئے انتظامیہ کا ساتھ دیا ہے کیونکہ پاکستان ہمارا ہے اور اس کی حفاظت کرنے میں بھی علماء کا کردار سب سے اہم ہے۔سید ضیاء اللہ شاہ بخاری نے کہا کہ ملک سے فرقہ واریت کا خاتمہ ہو چکا ہے جس کیلئے علماء نے بے پناہ قربانیاں دیں لیکن اب ملک کے دفاعی اداروں کیخلاف سازشیں ہو رہی ہیں جنہیں کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں