ساہیوال، نئے دفتری اوقات کے باوجود 3 بجے سرکاری دفاتر کو تالے

ساہیوال (بیورورپورٹ) حکومت پنجاب کے سرکاری دفاتر کے اوقات کے نوٹیفکیشن پرعملدرآمد نہ ہوسکا‘ مختلف صوبائی محکموں کے دفاتر کے اکثرملازمین تین بجے کے بعد گھروں کوروانہ ہوگئے‘ عملدرآمدکیلئے نگران کمیٹیاں بنائی جائیں‘ شہریوں کامطالبہ۔ تفصیلا ت کے مطابق وزیراعظم پاکستان عمران خان کی طرف سے وفاقی محکموں کے دفتری اوقات صبح نوبجے سے شام پانچ بجے تک کرنے کاحکم دیاگیا جس کے بعد پنجاب حکومت نے بھی صوبائی محکموں کے دفتری اوقات تبدیل کردیئے اور ہفتہ میں چھ روز کام کرنے اور ساتویں روزاتوار کوچھٹی کاحکم جاری کیا۔ دلچسپ امر ہے کہ پنجاب حکومت کے نوٹیفکیشن پرنہ تو عملدرآمد ہورہاہے اورنہ ہی کوئی افسر نوٹس لے رہاہے اوردفتری ملازمین تین بجے سہ پہر کے بعد گھروں کوروانہ ہوجاتے ہیں اگرکوئی شہری اپنے کام کے سلسلہ میں کسی بھی دفتر جاتاہے تووہاں متعلقہ عملہ غائب ہے جبکہ بعض دفاتر پرتالے لگے ہوئے ہیں۔ شہریوں نے سرکاری دفاتر میں نئے سرکاری اوقات پرعملدرآمد نہ ہونے پرتشویش کااظہار کیاہے ا ور وزیراعظم اوروزیراعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ سرکاری اوقات پر عملدرآمد کیلئے نگران کمیٹیاں تشکیل دی جائیں جوروزانہ کی بنیاد پرسرکاری دفاتر کوچیک کرکے اعلیٰ حکام کو رپورٹ پیش کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں