سرکاری افسران کے خلاف مقدمہ بازی میں ملوث شخص بلیک لسٹ

ساہیوال (بیورورپورٹ)ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج رانا مسعود اختر نے سرکاری افسران کے خلاف جھوٹی اور بے بنیاد درخواستیں دائر کرنے والے عادی مقدمہ باز ندیم احمد کو ٹاؤٹ قرار دیکر عدالتو ں اور دفاتر میں داخلے پر پابندی عائد کر دی۔انہو ں نے یہ پابندی لیگل پریکٹیشنرز و بار کونسلز ایکٹ 1973ء کی دفعہ 59(3)کے تحت عائد کی ہے۔ تفصیلات کے مطابق طارق بن زیاد کالونی کا رہائشی ندیم احمد ولد ذکاؤالدین ایک عادی مقدمہ باز اور درخواست باز ہے اور ریکارڈ کے مطابق مذکورہ شخص نے مختلف ادوار میں 14جوڈیشل افسران‘دو افسران محکمہ پراسیکیوشن‘16پولیس و اہلکاران اور متعدد افسران محکمہ انسداد رشوت ستانی اور رجسٹرار جوائنٹ سٹاک کمپنی کو جھوٹے مقدمات اور شکایات میں الجھائے رکھا۔مذکورہ ٹاؤٹ نے کل 78درخواستیں‘شکایات سرکاری افسران‘اہلکاران اور سادہ لو ح عوام ضلعی عدلیہ ساہیوال میں دائر کی جو دوران سماعت جھوٹی اور بے بنیاد ثابت ہوئیں۔ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج رانا مسعود اختر نے ندیم احمد کو ٹاؤٹ قرار دیکر اسے ٹاؤٹوں کی لسٹ میں شامل کرنے کا حکم دیتے ہوئے اس لسٹ کی کاپیاں تمام عدالت ضلعی و ریونیو عدالت کو بھجوانے اور مذکورہ ٹاؤٹ کے بلاجواز احاطہ عدالت میں داخلے پر پابندی کا حکم دیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں