عامر لیاقت زرداری کے قدموں میں کیوں بیٹھے؟ وضاحت آ گئی

اسلام آباد(ایس این این )قومی اسمبلی کے اجلاس میں تحریک انصاف کے رہنما ڈاکٹر عامر لیاقت پیپلزپارٹی کے شریک چیئر مین اور سابق صدر آصف زرداری اور تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کی نشست کے پاس نیچے بیٹھ کر گفتگو کرتے رہے۔ ا سپیکرکے انتخاب کے دوران ڈاکٹر عامر لیاقت پہلے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے پاس آئے اورنیچے بیٹھ گرگفتگو کرتے رہے اس کے بعد وہ سابق صدر کے پاس گئے اور نشست کے قریب بیٹھ گئے اور ان سے گفتگو کرتے رہے ۔ عمران خان کی نشست کے ساتھ قائد ایوان کی نشست خالی ہے۔ وزیراعظم کے سوا اس کرسی پر کوئی نہیں بیٹھ سکتا تاہم آصف علی زرداری کے پاس ایک نشست خالی تھی اس کے باجود عامر لیا قت نیچے بیٹھ کر گفتگو کرتے رہے، شاید ان کا یہ احترام کا طریقہ کار ہے یا وہ خود کو نمایاں کرنے چاہتے ہیں ۔اجلاس کے دوران کئی رہنماوں نے زرداری اور عمران سے ان کی نشستوں پر آکر کھڑے ہو کر بات کی لیکن کوئی نیچے نہیں بیٹھا۔تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت حسین نے قومی اسمبلی میں اسپیکر کے انتخاب کے دوران پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کے قدموں میں بیٹھنے کی وضاحت کردی۔ انہوں نے کہا کہ ڈپٹی اسپیکر کے انتخاب کے لئے ووٹ مانگنے اور اسمبلی میں ن لیگ کے احتجاج سے پیپلزپارٹی کو الگ رہنے کے لئے زرداری کے پاس گیا تھا ۔ جس کام کے لئے گیا وہ کام ہو گیا۔ ڈپٹی اسپیکر کے انتخاب میں تحریک انصاف کے امیدوار کو زیادہ ووٹ ملے۔ انہوں نے کہا کہ اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کے انتخاب کے دوران سب سے زیادہ بھاگ دوڑ میں نے کی۔ تحریک انصا ف کی مضبوطی اور بہتری کے لئے ارکان اسمبلی سے ملاقاتیں کیں ۔ جس کے مثبت نتائج نکلے۔ انہوں نے کہا کہ قدموں میں کسی کے نہیں بیٹھا۔ عاجزی سے بیٹھا ہوں، سابق صدر زرداری اٹھنا چاہ رہے تھے میں نے منع کیا کیونکہ میں درخواست کرنے گیا تھاکہ پیپلز پارٹی احتجاج سے الگ رہے تو نوازش ہوگی۔ عاجزی سے دل پگھلتے ہیں اور قربتیں بڑھتی ہیں۔ یاد رکھو زمین پر بیٹھنے والے کبھی گرا نہیں کرتے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں