ای روزگار سنٹر کے زیر اہتمام طلبا میں سرٹیفکیٹس تقسیم

ساہیوال (بیورورپورٹ)ملک سے بیروز گاری کے خاتمے اور کاروبار میں وسعت اور تنوع کیلئے ضروری ہے کہ طلبا وطالبات ایسا ہنر سیکھیں جس سے خود روز گار کے مواقع پیدا ہوں اور وہ ملازمت مانگنے کی بجائے دینے والے بن سکیں۔قوموں کی ترقی میں نوجوانوں کی فنی اور سائنسی تربیت نے اہم کردار ادا کیا ہے اس لئے ضروری ہے کہ سائنس اور ٹیکنالوجی میں تحقیق کو فروغ دیا جائے۔یہ بات ڈائریکٹر کامسیٹ یونیورسٹی ساہیوال کیمپس ڈاکٹر سلیم فاروق شوکت نے ای روز گار سنٹر کے تیسرے بیج کے 50طلبا وطالبات میں سرٹیفکیٹس تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس میں ڈپٹی رجسٹرار صفدر علی اور ای روز گار سنٹر کے اسسٹنٹ مینجر اعجاز فاروق نے بھی شرکت کی۔تقریب میں بتایا گیا کہ اس سنٹر سے طلبا وطالبات کو گھر بیٹھے کمپیوٹر کی مدد سے روز گار کا ہنر سکھایا جاتا ہے تا کہ وہ خود روز گار حاصل کر سکیں اور پاس آؤٹ ہونے والے ان طلبا و طالبات نے دوران تربیت 6ہزار ڈالر سے زائد آمدنی بھی حاصل کی ہے جبکہ ابتک 27ہزار ڈالر کما لئے گئے ہیں۔ڈاکٹر سلیم فاروق شوکت نے کہا کہ موجودہ دور سائنس اور ٹیکنالوجی کا دور ہے جس میں ترقی کیلئے ضروری ہے کہ یونیورسٹی سے ڈگریاں لیکر نکلنے والے طلبا و طالبات اپنے اندر کاروبار کو کامیاب بنانے کی سکل بھی حاصل کر یں تا کہ کسی دوسرے کا محتاج ہونے کی بجائے اپنے ہنر اور سوچ سے ملک کی ترقی میں اہم کردار ادا کر سکیں۔تقریب کے آخر میں انہو ں نے طلبا وطالبات میں سر ٹیفکیٹس تقسیم کئے جبکہ 3طالبات حافظہ عائشہ صدیقہ‘عشرت فاطمہ اور انیلہ فرزند کو بہترین پراجیکٹ پر پہلا انعام اور شیلڈ دی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں