ایم کیو ایم کا حکومت سازی میں تحریک انصاف کا ساتھ دینے کا فیصلہ

اسلا آباد(ایس این این) متحدہ قومی موومنٹ اور پاکستان تحریک انصاف کے مابین حکومت سازی میں باہمی تعاون کا معاہد طے پاگیا. ایم کیو ایم حکومتی بینچز پر بیٹھے گی. فریقین کا اعلان. معاہدہ کراچی کی بہتری اور ملکی ترقی کے پیش نظر کیا گیا. ایم کیو ایم کے وفد کی میڈیا سے بات چیت. آج ایم کیو ایم کےوفد نے خالد مقبول صدیقی کی قیادت میں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان سے بنی گالہ میں ملاقات کی، ایم کیوایم کے وفد میں عامرخان، فیصل سبزواری، وسیم اختر اور کنور نوید جمیل شامل تھے۔عمران خان سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو میں جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم پاکستان سے مکمل طور پر اتحاد اور تحریری معاہدہ ہوگیا ہے، ہمارا منشور موثر بلدیاتی نظام کو اہمیت دیتا ہے ایسا نظام جو نام نہاد نہ ہو، ہم ایم کیو ایم کی عدالت میں بلدیاتی نظام پر اختیارات کے حوالے سے جو پٹیشن ہے اس کا بھی مکمل ساتھ دیں گے۔
جہانگیر ترین نے کہا کہ کراچی کے عوام نے بھرپور طریقے سے نکل کر ہمیں اور ایم کیو ایم کو ووٹ دیے تاہم ماضی میں کراچی کو نظر انداز کیا گیا اور مسائل پر توجہ نہیں دی گئی، کراچی کو خصوصی مالیاتی پیکج دیا جائے گا جس پر من و عن عمل ہوگا۔اس موقع پر کنوینیر ایم کیو ایم خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ عمران خان کی دعوت پر ہم یہاں آئے، جمہوریت کی مضبوطی کے لیے جو فیصلہ کیا یہ ملاقات اس کی ایک کڑی ہے، کراچی میں ایم کیو ایم کا مینڈیٹ ہے، کراچی کی ترقی اور خوشحالی پاکستان کی ترقی ہے، ہم ملکر ساتھ چلیں گے، ہم نے سیاست سے زیادہ ملکی مفاد کو مد نظر رکھا۔تحریک انصاف کی حکومت کراچی کو خصوصی مالیاتی پیکج دے گی. سندھ کے اندرونی علاقوں کے لیے بھی خصوصی تعاون کیا جائے گا. عمران خان نے ایم کیو ایم کے وفد کو مردم شماری کے حوالے سے تحفظات دور کرنے کی بھی یقین دہانی کروائی.

اپنا تبصرہ بھیجیں