چیف جسٹس کا شیخ رشید کے ہمراہ مدر چائلڈ ہسپتال کا دورہ

اسلام آباد(ایس این این ) سپریم کورٹ کے چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا ہے کہ کسی کی انتخابی مہم نہیں چلا رہا۔سپریم کورٹ میں 10 سال سے تاخیر کا شکار مدرچائلڈ اسپتال راولپنڈی سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ درخواست گزار شیخ رشید عدالت میں پیش ہوئے۔ دوران سماعت اسپتال کی تعمیر کے لئے اداروں نے 2 سال کا وقت مانگ لیا۔چیف جسٹس نے کہاکہ 2سال نہیں دے سکتا، 18ماہ میں کام مکمل کریں۔ اسپتال کی تعمیر کی نگرانی سپریم کورٹ کرے گی۔ چیف جسٹس کے حکم پر شیخ رشید نے کہا کہ اللہ کرے میری عمر بھی آپ کو لگ جائے۔ آپ کو اندازہ نہیں کہ اللہ تعالی نے کتنا بڑا کام کرایا ہے۔شیخ رشید نے چیف جسٹس سے کہا کہ اسپتال آپ سے منسوب ہوناچاہیے۔ چیف جسٹس نے جواب دیا کہ شیخ صاحب میں اپنا نام کہیں نہیں چاہتا۔ شیخ رشید نے چیف جسٹس سے اسپتال کا دورہ کرنے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے وہاں جانے سے آدھے کام ہوجائیں گے۔چیف جسٹس نے کہا کہ اسپتال کے دورے کی شاید ضرورت نہ رہے جو ہدایات وہاں جاری کرنی ہیں یہاں بھی کرسکتے ہی۔ سماعت ختم ہونے کے بعد چیف جسٹس نے راولپنڈی میں زیر تعمیر اسپتال کا دورہ کیا اور کاموں کا جائزہ لیا۔ اس موقع پر شیخ رشید بھی موجود تھے۔دورے کے دوران میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ یہ تاثر نہ دیا جائے کہ کسی کی مہم چلا رہا ہوں۔کسی کی سیاسی مہم چلانے کا ٹھیکہ نہیں اٹھایا ہوا۔ خود سے اسپتالوں کا دورہ کر رہا ہو ں۔ مریضوں کو درپیش مسائل کا ازالہ کروں گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں