چیف جسٹس نےحمزہ شہباز اور عائشہ احد میں مفاہمت کروا دی

لاہور(ایس این این) حمزہ شہباز اور عائشہ احد کے درمیان معاملہ باہمی افہام و تفہیم سے حل ہو گیا. مصالحت میں چیف جسٹس نے اہم کردار ادا کیا. جس کے بعد دونوں نے ایک دوسرے کے خلاف کیس واپس لینے کا فیصلہ کرلیا۔سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں عائشہ احد پر مبینہ تشدد کیس کی سماعت کے دوران چوہدری ثاقب نثار نے عائشہ احد اور حمزہ شہباز کو چیمبر میں بلا یا اور کہا کہ ایک باپ کی حیثیت سے آپ دونوں کو چیمبر میں آنے کا کہہ رہے ہیں، جو بات آپ کھلی عدالت میں نہیں بتانا چاہتے وہ چیمبر میں بتائیں۔
چیف جسٹس میاں ثاقب نثار، جسٹس عمر عطا بندیال اور جسٹس اعجاز الاحسن نے تقریباً ایک گھنٹے چیمبر میں دونوں کا مؤقف سنا جس کے بعد چیف جسٹس نے کمرہ عدالت میں آکر فیصلہ لکھوایا کہ حمزہ شہباز اور عائشہ احد کے درمیان معاملہ افہام و تفہیم سے حل ہوگیا ہے اور دونوں نے ایک دوسرے کے خلاف کیسز واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ عائشہ احد اور حمزہ شہباز کےدرمیان جن شرائط پر مفاہمت ہوئی ان پر وہ دونوں میڈیا پر بات نہیں کرینگے۔عدالت کے فیصلے کےبعد حمزہ شہباز نے صحافیوں کے سوالات پر بتایا کہ وہ عدالت کے فیصلے سے مطمئین ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں